Print Sermon

اِس ویب سائٹ کا مقصد ساری دُنیا میں، خصوصی طور پر تیسری دُنیا میں جہاں پر علم الہٰیات کی سیمنریاں یا بائبل سکول اگر کوئی ہیں تو چند ایک ہی ہیں وہاں پر مشنریوں اور پادری صاحبان کے لیے مفت میں واعظوں کے مسوّدے اور واعظوں کی ویڈیوز فراہم کرنا ہے۔

واعظوں کے یہ مسوّدے اور ویڈیوز اب تقریباً 1,500,000 کمپیوٹرز پر 221 سے زائد ممالک میں ہر ماہ www.sermonsfortheworld.com پر دیکھے جاتے ہیں۔ سینکڑوں دوسرے لوگ یوٹیوب پر ویڈیوز دیکھتے ہیں، لیکن وہ جلد ہی یو ٹیوب چھوڑ دیتے ہیں اور ہماری ویب سائٹ پر آ جاتے ہیں کیونکہ ہر واعظ اُنہیں یوٹیوب کو چھوڑ کر ہماری ویب سائٹ کی جانب آنے کی راہ دکھاتا ہے۔ یوٹیوب لوگوں کو ہماری ویب سائٹ پر لے کر آتی ہے۔ ہر ماہ تقریباً 120,000 کمپیوٹروں پر لوگوں کو 43 زبانوں میں واعظوں کے مسوّدے پیش کیے جاتے ہیں۔ واعظوں کے مسوّدے حق اشاعت نہیں رکھتے تاکہ مبلغین اِنہیں ہماری اجازت کے بغیر اِستعمال کر سکیں۔ مہربانی سے یہاں پر یہ جاننے کے لیے کلِک کیجیے کہ آپ کیسے ساری دُنیا میں خوشخبری کے اِس عظیم کام کو پھیلانے میں ہماری مدد ماہانہ چندہ دینے سے کر سکتے ہیں۔

جب کبھی بھی آپ ڈاکٹر ہائیمرز کو لکھیں ہمیشہ اُنہیں بتائیں آپ کسی مُلک میں رہتے ہیں، ورنہ وہ آپ کو جواب نہیں دے سکتے۔ ڈاکٹر ہائیمرز کا ای۔میل ایڈریس rlhymersjr@sbcglobal.net ہے۔

مسیح کے زخم

THE WOUNDS OF CHRIST
(Urdu)

ڈاکٹر آر۔ ایل۔ ہائیمرز، جونیئر کی جانب سے
.by Dr. R. L. Hymers, Jr

لاس اینجلز کی بپتسمہ دینے والی عبادت گاہ میں دیا گیا ایک واعظ
13 دسمبر، 2009، خُداوند کے دِن کی صبح
A sermon preached at the Baptist Tabernacle of Los Angeles
Lord's Day Morning, December 13, 2009

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

مسیح کو صلیب پر کیلوں سے جڑا گیا تھا۔ وہ وہاں پرخون میں لت پت اور اذیت میں مرا تھا۔ بعد میں جب وہ مر گیا تھا، ’’سپاہیوں میں سے ایک نے اپنا نیزہ لے کر یسوع کے پہلو میں مارا، اور اُس کی پسلی چھید ڈالی جس سے [فوراً] خون اور پانی بہنے لگا‘‘ (یوحنا19:34)۔ یوحنا رسول وہاں صلیب کے پاس ہی تھا۔ اُس نے مسیح کے ہاتھوں اور پیروں میں کیلوں کو ٹُھکتے ہوئے دیکھا تھا۔ اُس نے یسوع کو مرتے ہوئے دیکھا تھا۔ اُس نے سپاہیوں کو مسیح کی پسلی کو نیزے سے چھیدتے ہوئے دیکھا تھا۔ یوحنا نے خون اور پانی کو اُس کی پسلی کے زخم میں سے اُمڈتے ہوئے دیکھا تھا۔ یوحنا نے کہا کہ وہ اِس کا ’’چشم دید گواہ ہے [اور] وہ گواہی دیتا ہے‘‘ کہ یہ رونما ہوا تھا (یوحنا19:35)۔ اُس نے رومی سپاہیوں کو یسوع کے مُردہ جسم کو ’’ایک نئی قبر میں دفناتے ہوئے دیکھا، جس میں پہلے کوئی لاش نہیں رکھی گئی تھی‘‘ (یوحنا19:41)۔

اگلے دِن علی الصبح میریم مگدلینی بھاگتی ہوئی آئی اور پطرس اور یوحنا کو بتایا کہ وہ بڑا سا پتھر جس نے یسوع کے مقبرے کا راستہ ڈھانپ رکھا اُس کے ’’قبر پر سے ہٹا دیا گیا تھا‘‘ (یوحنا20:1)۔ پطرس اور یوحنا خالی مقبرے کی جانب دوڑے۔ یوحنا وہاں پہلے پہنچا تھا۔ ’’اُس نے جُھک کر مقبرے میں اندر جھانکا، اور سوتی کپڑے [جو یسوع کے جسم کے گرد لپیٹے گئے تھے] پڑے دیکھے‘‘ (یوحنا20:5)۔ اُس دوران پطرس بھی پیچھے پیچھے یوحنا کے پاس پہنچ گیا ’’اور سیدھا [قبر] میں داخل ہو گیا، اور اُس نے دیکھا وہاں سوتی کپڑے پڑے ہوئے ہیں، اور کفن کا وہ رومال بھی جو یسوع کے سر پر لپیٹا گیا تھا سوتی کپڑوں سے الگ ایک جگہ تہہ کیا ہوا پڑا تھا‘‘ (یوحنا20:6۔7)۔ پھر یوحنا پطرس کے تعاقب میں قبر میں داخل ہوا اور کفن کے کپڑے پڑے ہوئے دیکھے اور قبر مزار خالی تھا۔ وہ پریشانی کی حالت میں وہاں سے چلے گئے، ’’کیونکہ وہ ابھی تک پاک کلام کی اِس بات کو سمجھ نہ پائے تھے جس کے مطابق یسوع کا مُردوں میں سے جی اُٹھنا لازم تھا‘‘ (یوحنا20:9)۔ یہ تمام اتوار کی علی الصبح رونما ہوا تھا۔

بعد میں ’’اُسی دِن‘‘ شاگرد یہودی سرکار کے’’ ڈر سے‘‘ جنہوں نے یسوع کی مصلوبیت کا تقاضا کیا تھا ایک کمرے میں چھپے ہوئے تھے (یوحنا20:19)۔ اچانک یسوع وہاں پر تھا، مُردوں میں سے جی اُٹھا! اُس نے اُن سے کہا، ’’تم پر سلامتی ہو‘‘ (یوحنا20:19)۔

’’لیکن وہ اِس قدر ہراساں اور خوف زدہ ہو گئے کہ سمجھنے لگے کہ وہ کسی رُوح کو دیکھ رہے ہیں۔ اور یسُوع نے اُن سے کہا، تُم کیوں گھبرائے ہُوئے ہو؟ اور تمہارے دلوں میں شکوک کیوں پیدا ہو رہے ہیں؟ میرے ہاتھ اور پاؤں دیکھو، یہ میں خود ہی ہُوں۔ مجھے چھُوکر دیکھو کیونکہ رُوح کی ہڈّیاں ہی ہوتی ہیں اور نہ گوشت جیسا تُم مجھ میں دیکھ رہے ہو۔ یہ کہنے کے بعد اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:37۔40).

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

وہ زخم جو اُس کے ہاتھوں اور پیروں میں کیلوں نے بنائے تھے وہاں پر اُس کے مُردوں میں سے جی اُٹھے جسم میں اُن کے دیکھنے کے لیے تھے۔ وہ اُس کی پسلی میں سپاہی کے نیزے سے بنا ہوا بڑا سا گھاؤ، وہ زخم دیکھ سکتے تھے۔ یسوع نے توما سے کہا،

’’اپنی اُنگلی لا اور میرے ہاتھوں کو دیکھ اور اپنا ہاتھ بڑھا اور میری پسلی کو چھو، شک مت کر بلکہ اعتقاد رکھ‘‘ (یوحنا 20:27).

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

مسیح آسانی سے اُن زخموں کو اپنے جسم سے مٹا سکتا تھا۔ وہ اپنے مصائب کے اُن تمام نشانات کو مٹا سکتا تھا جب وہ قبر میں سے جی اُٹھا تھا۔ لیکن اُس نے ایسا نہیں کیا تھا۔ اِس کے بجائے، وہاں اُس کے ہاتھوں اور پیروں میں کیلوں کے نشانات موجود تھے، اور اُس کی پسلی میں وہ گہرا گھاؤ موجود تھا۔ اِس کی کیا وجہ تھی؟ اُس نے کیوں اُن کو اپنے زخم دکھائے تھے؟ میں آپ کو تین وجوہات پیش کروں گا کیوں،

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

I۔ اوّل، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ وہ وہی ہستی تھی جس کو صلیب پر مصلوب کیا گیا تھا۔

توہم پرست بدعتیوں نے کہا کہ یسوع حقیقتاً صلیب پر نہیں مرا تھا۔ مسلمانوں کا قرآن کہتا ہے کہ یسوع صلیب پر نہیں مرا تھا۔ آج بہت سے لوگ ہیں جو یہ یقین نہیں کرتے کہ خُدا اپنے بیٹے کو اِس قدر ہولناک موت مرنے دے گا۔ یسوع جانتا تھا کہ اُس کی مصلوبیت کو لے کر بہت سی بے اعتقادی ہو جائے گی۔ یہ پہلی وجہ ہے کیوں،

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

یسوع چاہتا تھا ہر کوئی جان لے کہ واقعی اُس نے صلیب پر مصائب برداشت کیے اور مرا تھا۔ اِسی لیے، اُس نے اپنے شاگردوں کو اپنے زخم دیکھنے دیے، اور حتٰی کہ اُنہیں چھونے دیا۔ یوحنا رسول جو اِس کا ایک چشم دید گواہ ہے، اُس کے بارے میں بتاتا ہے ’’ہم نے اُسے سُنا، اور اپنی آنکھوں سے دیکھا، بلکہ غور سے دیکھا اور اپنے ہاتھوں سے اُسے چھوأ بھی ہے‘‘ (1۔یوحنا1:1)۔ ڈاکٹر واٹز Dr. Watts نے کہا،

دیکھو، اُس کے سر سے، اُس کے ہاتھوں، اُس کے پیروں سے،
   دُکھ اور محبت باہم مل کر نیچے بہتی ہے:
کیا کبھی ایسے محبت اور دُکھ ملے ہیں،
   یہ کانٹوں نے اِس قدر اعلٰی تاج بنایا ہو؟
(جب میں حیرت انگیز صلیب کا جائزہ لیتا ہوں When I Survey the Wondrous Cross‘‘ شاعر آئزک واٹز، ڈی۔ ڈی۔ Isaac Watts, D. D.، 1674۔1748)۔

صلیب میں، صلیب میں،
   ہمیشہ میرا جلال ہو؛
جب تک کہ میری بے خود جان پا نہ لے
   دریا سے پرے آرام۔
(صلیب کے نزدیک Near the Cross‘‘ شاعر فینی جے۔ کراسبی
      Fanny J. Crosby ، 1820۔1915)۔

’’یہ کہنے کے بعد اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

II۔ دوئم، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ وہ ہمارےگناہوں کے لیے مصائب زدہ متبادل ہے۔

یوحنا بپتسمہ دینے والے نے کہا تھا،

’’دیکھو خدا کا برّہ ہے جو دنیا کا گناہ اُٹھا لے جاتا ہے‘‘ (یوحنا 1:29).

لیکن اُس نے درست طور پر آشکارہ نہیں کیا تھا کہ کیسے یسوع ہمارے گناہوں کو اُٹھا لے جائے گا۔ یہ اُس وقت تک نہیں ہوا تھا جب تک کہ یسوع مُردوں میں سے جی نہ اُٹھا کہ شاگرد جان جائیں کہ یسوع،

’’... خُود اپنے ہی بدن پر ہمارے گناہوں کا بوجھ لیے ہُوئے صلیب پر چڑھ گیا‘‘(1۔ پطرس 2:24).

یہ صرف اُس کے ہاتھوں اور پیروں میں کیلوں کے نشانات دیکھنے کے بعد تھا کہ وہ جان گئے،

’’مسیح نے بھی یعنی راستباز نے نا راستوں کے گناہوں کے بدلہ میں ایک ہی بار دُکھ اُٹھایا تاکہ وہ ہمیں خدا تک پہنچائے‘‘ (1۔ پطرس 3:18).

یہ دوسری وجہ ہے،

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

وہ چاہتا تھا کہ ہم یقینی طور پر جان جائیں کہ ہمارے گناہوں کا کفارہ ادا کرنے کے لیے اُس نے مصائب برداشت کیے اور صلیب پر مرا، تاکہ ہم گناہ اور جہنم سے بچا لیے جائیں۔ وہ چاہتا تھا کہ ہم اُسکے ہاتھوں اور پیروں میں کیلوں کے نشانات دیکھیں تاکہ ہم جان جائیں کہ خُدا کا قہر صلیب پر اُس پر پڑا تھا، کہ ہم جان جائیں

’’اُس کے فضل کے سبب اُس مخلصی کے وسیلہ سے جو یُسوع مسیح میں ہے مُفت راستبار ٹھہرائے جاتے ہیں خدا نے یُسوع کو مُقّرر کیا کہ وہ اپنا خُون بہائے اور انسان کے گناہ کا کفارہ بن جائے اور اُس پر ایمان لانے والے فائدہ اُٹھائیں‘‘ (رومیوں 3:24۔25).

اِسی لیے،

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

ڈاکٹر واٹز کا حمد و ثنا کا گیت گائیں!

دیکھو، اُس کے سر سے، اُس کے ہاتھوں، اُس کے پیروں سے،
   دُکھ اور محبت باہم مل کر نیچے بہتی ہے:
کیا کبھی ایسے محبت اور دُکھ ملے ہیں،
   یہ کانٹوں نے اِس قدر اعلٰی تاج بنایا ہو؟

’’صلیب میں‘‘ اسے گائیں!

صلیب میں، صلیب میں،
   ہمیشہ میرا جلال ہو؛
جب تک کہ میری بے خود جان پا نہ لے
   دریا سے پرے آرام۔

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

III۔ سوئم، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ زمانوں سے وہی نجات دہندہ ہے۔

ہمیں دائمی مخلصی دلانے کے لیے مسیح اپنے زخم اور اپنا خون آسمان میں اپنے ساتھ لے گیا۔

’’لیکن مسیح بہتر برکتوں کا سردار کاہن بن کر آ چُکا ہے جو اب موجود ہیں اور وہ جس خیمہ سے خدمت انجام دیتا ہے وہ زیادہ بڑا اور کامل ہے اور اِنسانی ہاتھوں کا بنایا ہُوا یعنی اِس دُنیا کا نہیں۔ وہ بکروں اور بچھڑوں کا نہیں بلکہ اپنا خُون لے کر ایک ہی بار پاک ترین مکان میں داخل ہُوا اور ہمیں ایسی نجات دلائی جو ابدی ہے‘‘ (عبرانیوں 9:11۔12).

’’کیونکہ مسیح اِنسانی ہاتھوں کے بنائے ہُوئے مکان میں جو حقیقی پاک مکان کی نقل ہے داخل نہیں ہُوا بلکہ آسمان ہی میں داخل ہُوا جہاں وہ ہماری خاطر خدا کے روبرو حاضر ہے‘‘ (عبرانیوں 9:24).

آسمان میں خُدا کے داہنے ہاتھ پر بیٹھے ہوئے، یسوع کے زخم ہمیشہ اور ابد تک کے لیے خُدا اور فرشتوں کے لیے ایک یاد دہانی ہیں کہ،

’’وہ ہمارے گناہوں کا کفّارہ ہے اور نہ صرف ہمارے ہی گناہوں کا بلکہ ساری دُنیا کے گناہوں کا کفّارہ ہے‘‘ (1۔ یوحنا 2:2).

اِس کے باوجود بہت سے لوگ آج دُنیا میں یسوع کو قبول نہیں کرتے ہیں۔ زیادہ تر لوگ خود اپنے نیک کاموں اور خود اپنے مذہبی عقیدوں کے ذریعے سے بچائے جانا چاہتے ہیں۔ اِس لیے وہ یسوع کو قبول نہیں کرتے ہیں، جو نجات کے لیے خُدا کی فراہمی ہے۔ یہ میں نے نہیں کہا تھا۔ یہ یسوع خود تھا جس نے کہا،

’’میرے وسیلہ کے بغیر کوئی باپ کے پاس نہیں آتا‘‘ (یوحنا 14:6).

خُدا کے پاس جانے کا واحد راستہ یسوع ہے کیونکہ وہ ہی واحد ہے جس نے ہمارے گناہ کے کفارے کے لیے مصائب برداشت کیے اور مرا۔ کسی بھی دوسرے مذہبی راہنما نے ایسا نہیں کیا – نہ کنفوشیئس نے، نہ بدھا نے، نہ محمد نے، نہ جوزف سمتھ نے، نہ ہی کسی اور نے! یہ صرف یسوع کے بارے میں ہی کہا جا سکتا ہے،

’’لیکن وہ ہماری خطاؤں کے سبب سے گھائل کیا گیا، اور ہماری بد اعمالی کے باعث کُچلا گیا؛ جو سزا ہماری سلامتی کا باعث ہُوئی وہ اُس نے اُٹھائی، اور اُس کے کوڑے کھانے سے ہم شفا یاب ہُوئے‘‘ (اشعیا 53:5).

صرف یسوع کے بارے میں یہ کہا جا سکتا ہے،

’’مسیح یسُوع گنہگاروں کو نجات دینے کے لیے دُنیا میں آیا‘‘ (1۔ تیموتاؤس 1:15).

یہ صرف یسوع کے بارے میں کہا جا سکتا ہے،

’’لیکن خدا ہمارے لیے اپنی محّبت یُوں ظاہر کرتا ہے کہ جب ہم گنہگار ہی تھے تو مسیح نے ہماری خاطر اپنی جان قربان کردی۔ پس جب ہم نے مسیح کے خُون بہانے کے باعث راستباز ٹھہرائے جانے کی توفیق پائی تو ہمیں اور بھی زیادہ یقین ہے کہ ہم اُس کے وسیلہ سے غضب اِلٰہی سے ضرور بچیں گے‘‘ (رومیوں 5:8۔9).

اِسی لیے،

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

ڈاکٹر واٹز کا حمد و ثنا کا گیت دوبارہ گائیں!

دیکھو، اُس کے سر سے، اُس کے ہاتھوں، اُس کے پیروں سے،
   دُکھ اور محبت باہم مل کر نیچے بہتی ہے:
کیا کبھی ایسے محبت اور دُکھ ملے ہیں،
   یہ کانٹوں نے اِس قدر اعلٰی تاج بنایا ہو؟

’’صلیب میں‘‘ اسے دوبارہ گائیں!

صلیب میں، صلیب میں،
   ہمیشہ میرا جلال ہو؛
جب تک کہ میری بے خود جان پا نہ لے
   دریا سے پرے آرام۔

یہاں تک کہ جب یسوع دوسری مرتبہ آتا ہے، تو اُس وقت بھی اُس کے ہاتھوں اور پیروں پر مصلوبیت کے نشانات موجود ہونگے۔ مسیح نے زکریا نبی کی معرفت کہا،

’’اور وہ اس پر جسے اُنہوں نے چھیدا تھا ایسا ماتم کریں گے‘‘ (زکریاہ 12:10).

وہ جو زندہ ہیں مسیح کے لیے رُخ نہیں موڑیں گے، جہنم میں ابدیت تک دُکھ میں ماتم کرتے رہیں گے۔ عظیم سپرجیئن نے کہا، ’’وہ چھیدے ہوئے ہاتھ اور وہ گھاؤ والی پسلی تمہارے خلاف گواہی ہونگے، حتیٰ کہ بدکار اعمال کے ذریعے سے مسیح کے دشمنوں تمہارے خلاف، اگر تم اُس کو قبول نہ کرتے ہوئے مر جاتے ہو، اور ابدیت میں داخل ہوتے ہو‘‘ (سی۔ ایچ۔ سپرجیئن C. H. Spurgeon، ’’یسوع کے زخم The Wounds of Jesus،‘‘ پارک سٹریٹ کی نئی واعظ گاہ The New Park Street Pulpit، پلگرِم اشاعت خانے Pilgrim Publications، جلد پنجم، صفحہ237)۔

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

لیکن سپرجئین نے دوبارہ کہا،

بیچارے گنہگار ... کیا تم [یسوع کے پاس] آنے کے لیے خوفزدہ ہو؟ تو پھر اُس کے ہاتھوں پر نظر ڈالو – اُس کے پیروں پر نظر ڈالو، کیا یہ تمہیں قائل نہیں کریں گے؟ ... اُس کی پسلی پر نظر ڈالو، وہاں سے اُس کے دِل کے لیے ایک آسان رسائی ہے۔ اُس کی پسلی چھیدی ہوئی ہے۔ اُس کی پسلی [آپ کے لیے] چھیدی ہوئی ہے… ہائے گنہگار، خُدا آپ کی اُس کے زخموں میں یقین کرنے میں مدد کرے! وہ ناکام نہیں ہو سکتے؛ مسیح کو زخموں کو اُنہیں شفا بخشنی چاہیے جو اُس پر اپنا بھروسہ رکھتے ہیں (ibid.، صفحہ240)۔

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

پرانی سیلویشن آرمی کے ایوینجلین بوتھ Evangeline Booth نے اِسے بخوبی کہا،

یسوع کے زخم کُھلے ہوئے ہیں،
   گنہگار، یہ اُن کے لیے بنائے گئے تھے؛
یسوع کے زخم کُھلے ہوئے ہیں،
   وہاں پر پناہ میں آئے ہوئے کو آزاد کرنے کے لیے۔
(’’مسیح کے زخم The Wounds of Christ‘‘ شاعر ایوینجلین بوتھ Evangeline Booth، 1865۔1950)۔

(واعظ کا اختتام)
آپ انٹر نیٹ پر ہر ہفتے ڈاکٹر ہیمرز کے واعظwww.realconversion.com پر پڑھ سکتے ہیں
www.rlhsermons.com پر پڑھ سکتے ہیں ۔
"مسودہ واعظ Sermon Manuscripts " پر کلک کیجیے۔

You may email Dr. Hymers at rlhymersjr@sbcglobal.net, (Click Here) – or you may
write to him at P.O. Box 15308, Los Angeles, CA 90015. Or phone him at (818)352-0452.

یہ مسودۂ واعظ حق اشاعت نہیں رکھتے ہیں۔ آپ اُنہیں ڈاکٹر ہائیمرز کی اجازت کے بغیر بھی استعمال کر سکتے
ہیں۔ تاہم، ڈاکٹر ہائیمرز کے تمام ویڈیو پیغامات حق اشاعت رکھتے ہیں اور صرف اجازت لے کر ہی استعمال کیے
جا سکتے ہیں۔

واعظ سے پہلے دُعّا ڈاکٹر کرہیٹن ایل۔ چَین Dr. Kreighton L. Chan نے کی تھی: یوحنا20:24۔29 .
واعظ سے پہلے اکیلے گیت مسٹر بنجامن کینکیڈ گریفتھ Mr. Benjamin Kincaid Griffith نے گایا تھا:
’’مسیح کے زخم The Wounds of Christ‘‘ (شاعر ایوینجلین بوتھ Evangeline Booth، 1865۔1950)۔

لُبِ لُباب

مسیح کے زخم

THE WOUNDS OF CHRIST

ڈاکٹر آر۔ ایل۔ ہائیمرز، جونیئر کی جانب سے
.by Dr. R. L. Hymers, Jr

’’اُس نے اُنہیں اپنے ہاتھ اور پاؤں دکھائے‘‘ (لوقا 24:40).

(یوحنا19:34، 35، 41؛ 20:1، 5، 6۔7، 9، 19؛
لوقا24:37۔40؛ یوحنا20:27)

I۔ اوّل، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ وہ وہی ہستی تھی جس کو صلیب پر مصلوب کیا گیا تھا، 1:یوحنا1:1 .

II۔ دوئم، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ وہ ہمارےگناہوں کے لیے مصائب زدہ متبادل ہے، یوحنا1:29؛ 1۔ پطرس2:24؛ 3:18؛ رومیوں 3:24۔25 .

III۔ سوئم، یسوع نے اُنہیں اپنے زخم دکھائے تاکہ ہم جان جائیں کہ زمانوں سے وہی نجات دہندہ ہے، عبرانیوں9:11۔12، 24؛ 1۔ یوحنا2:2؛ یوحنا14:6؛ اشعیا53:5؛ 1۔تیموتاؤس1:15؛ رومیوں5:8۔9؛ زکریا12:10 .